نظرانداز کرکے مرکزی مواد پر جائیں

اشاعتیں

طہارت اور پاکیزگی پر مضمون۔

 طھارت اور پاکیزگی۔

گداگری پر مکمل مضمون۔

 گداگری - گداگری پر مکمل مضمون۔

دوستی پر مکمل مضمون۔

 میرے دوست - دوستی پر مکمل مضمون۔

اپنی مدد آپ کرنے کے فوائد۔

 اپنی مدد آپ - اپنی مدد آپ کرنے کے فوائد۔

مریض کی عیادت کرنا۔

 عیادت مریض - مریض کی عیادت کرنا۔

زم زم کی کہانی۔

  زم زم - زم زم کی کہانی۔ مکہ معظمہ کی مسجد الحرام میں کعبہ شریف سے پندرہ میٹر کے فاصلے پر جنوب مشرق میں حجر اسود کی سیدھ میں ایک کنواں ہے۔ جس کے پانی کو آب زم زم کہتے ہیں۔ یہ کنواں کعبہ شریف سے بھی قدیم ہے۔ اور اس کی گہرائی کے بارے میں کیا تھا کہ وہ ایک سو چالیس فٹ ہے۔ لیکن حالیہ پیمائش پر یہ 207 فٹ گہرا پایا گیا۔ ممکن ہے پانی کی مسلسل نکاسی کی وجہ سے یہ نیچا ہو گیا ہوں مسلمانوں کے نزدیک اس کا پانی متبرک ہے۔ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اسے کھڑے ہو کر پیا اور ایک خصوصی دعا فرمائیں۔ اے اللہ میں تجھ سے سوال کرتا ہوں ایک ایسے علم کا جو فائدہ دینے والا اور ایسے رزق کا جو مجھے دل سے عطا کیا جائے اور مجھے بیماریوں سےشفاء مرحمت فرما۔ آج سے ہزاروں سال پہلے کی بات ہے کہ آج کل جہاں مکہ مکرمہ کا متبرک شہر آباد ہے۔ وہاں ریت اور سٹری ہوئی پہاڑیوں کے سوا کچھ نہ تھا۔ دور دور تک کسی جاندار کا گمان تک نہ تھا۔ اسی زمانے میں اللہ تعالی نے حضرت ابراہیم علیہ السلام کو حکم دیا کہ وہ اپنی بیوی حضرت ہاجرہ علیہ السلام کو ان کے نومولود حضرت اسماعیل علیہ السلام کے ہمرا مکے کی بے آب و گیاہ وادی میں چھوڑ آئیں۔ جب

تعلیم نسواں پر مضمون۔

 تعلیم نسواں پر مضمون - عورتوں کی تعلیم۔   تعلیم ایک ایسا عمل ہے۔ جس سے ایک نسل اپنا تہذیبی اور تمدنی ورثہ دوسری نسل کو منتقل کرتی ہے۔  اس مقصد کے لیے ہر سوسائٹی اپنے تہذیبی مسائل اور تمدنی حالات کے مطابق ادارے قائم کرتی ہے۔ یہ ادارے بھرپور کوشش کرتے ہیں کہ وہ قوم اور ملک کی توقعات پر پورا اتریں۔ ہر معاشرہ اپنی اقدار کے مطابق درسگاہوں کا اہتمام کرتا ہے۔ اسلامی سوسائٹی میں ان درسگاہوں کے انداز جدا ہیں اور لادینی درسگاہوں میں نصاب مختلف ہے۔ لیکن ایک چیز سب میں مشترک ہے۔ وہ یہ کہ پچھلی نسل اگلی نسل کو اپنے تمام تر تجربات منتقل کرے بلکہ پوری انسانیت کے تجربات اور علوم پوری طرح منتقل کرے۔ تاکہ دوسری اقوام عالم کے شنا بشانہ چل کر زندگی کی دوڑ میں شریک ہوا جا سکے۔ اسلام نے واضح کر دیا ہے کہ علم حاصل کرو خواہ تمہیں چین جانا پڑے۔ آج ہوائی جہاز نے چین کو قریب کر دیا ہے۔ جن دنوں حضور صلی علیہ وسلم نے تحصیل علم کی تاکید میں فرمایا، ان دنوں چین کا سفر جان جو کھو کا کام تھا۔ اس کے ساتھ یہ بھی فرمایا کہ جو شخص علم حاصل کرنے کی کوشش میں فوت ہو جائے وہ شہید ہے۔ جنگ بدر کے وہ قیدی جو فدیہ دینے کی است